88

بعض وزرا کے قلمدان تبدیل اور نئے وزرا کو کابینہ میں شامل کیا جا سکتا ہے

ذرائع کے مطابق بیرسٹر علی ظفر، انوار الحق کاکڑ اور فیصل جاوید کو کابینہ میں شامل کرنے پر غور کیا جارہا ہے جبکہ شبلی فراز اور فیصل واؤڈا نے بھی سینیٹربننےکے بعد وفاقی عہدوں کاحلف نہیں اٹھایا۔

اس حوالے سے وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیری مزاری کا کہنا تھا کہ کابینہ میں رد و بدل کے حوالے سے کوئی علم نہیں البتہ سینیٹر منتخب ہونے والے اراکین جلد وزارت کا حلف اٹھا کر کابینہ میں‌ شامل ہوجائیں‌ گے۔

دوسری جانب اسد عمر کا کہنا تھا کہ آئندہ ڈھائی سال میں معاملات بہتر کرنے کا ٹاسک دیا گیا ہے۔ وزیراعظم نے کہا ہماری دوسری اننگز کا آغاز ہوا ہے، ترجیحات دوبارہ طے کریں۔ وزیراعظم نے کہا ہماری دوسری اننگز کا آغاز ہوا ہے، ترجیحات دوبارہ طے کریں۔

یاد رہے کہ 2018 کے عام انتخابات میں کراچی کے حلقہ این اے 249 سے تحریک انصاف کے رہنما فیصل واؤڈا قومی اسمبلی کے ممبر منتخب ہوئے تھے، جس کے بعد انہیں وفاقی وزیر برائے آبی وسائل کا قلمدان سونپا گیا تھا۔سینیٹر منتخب ہونے کے بعد تاحال فیصل واڈا نے وزارت کا حلف نہیں اٹھایا۔

سینیٹ انتخابات سے قبل ایک اہم وفاقی وزیر نے اپنا نام نہ بتانے کی شرط پر کہا تھا کہ وزیر اعظم کو یہ احساس ہو گیا ہے کہ پارٹی حلقوں میں مایوسی بڑھ رہی ہے۔کابینہ میں وہی لوگ رہیں گے جو کارکردگی دکھائیں گے،

وفاقی وزیر کے مطابق وزیر اعظم پختہ یقین رکھتے ہیں کہ وزراء کو کسی عذر پیش کیے بغیر کارکردگی دکھانا ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں