57

جمشید اقبال چیمہ کا الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کیخلاف لاہورہائیکورٹ میں اپیل دائر کرنے کا اعلان

 پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنماو حلقہ این اے 133سے امیدوار جمشید اقبال چیمہ نے الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف لاہورہائیکورٹ میں اپیل دائر کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ انشا اللہ ہمیں انصاف ملے گا،ہم انتخاب لڑیں گے اور جیتیں گے، اس انتخاب میں فیصلہ ہو جائے گا عوام کسے پسند کرتے ہیں اور پتہ چلنا چاہیے لاہور اب کس کا گڑھ ہے۔ الیکشن ٹربیونل میں پیشی کے بعد اپنے وکلاء کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جمشید اقبال چیمہ نے کہا کہ الیکشن ٹربیونل نے کہاہے کہ ہمارا کیس بہت مختلف ہے، تجویز کنندہ اورتائید کنندہ کے باقی گھروالوں کے ووٹ اسی حلقے میں ہیں جبکہ ایک ووٹ تبدیل ہو گیا۔ ہم جو بنیادی نقطہ سمجھانا چاہتے تھے اسے تسلیم کیاگیا ہے، ٹربیونل قانون کی وضاحت نہیں کر سکتا لیکن ہم جو کہنا چاہتے تھے اسے کیس میں شامل کیا گیا ہے اورہمارا بنیادی نقطہ قبول ہواہے۔ ہمیں قوی امید ہے کہ ہمیں ہائیکورٹ سے ریلیف مل جائے گا۔ پاکستان تحریک انصاف ملک کی سب سے بڑی سیاسی جماعت ہے اسے کسی طر ح بھی ڈس فرنچائز نہیں کیا جاسکتا، تکنیکی غلطی کو ماناگیا ہے اس لئے ایک بڑی سیاسی جماعت کو انتخابی عمل سے باہر نہیں رکھا جا سکتا۔ ہم انشااللہ ہائیکورٹ سے ریلیف ملنے پر انتخاب میں حصہ بھی لیں گے اور جیتیں گے،اس انتخاب میں فیصلہ ہو جائے گا عوام کسے پسند کرتے ہیں اورمعلوم ہونا چاہیے اب لاہور کس کا گڑھ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم پیر کے روز لاہور ہائیکورٹ میں الیکشن کمیشن اورلیکشن ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کریں گے۔ جمشید اقبال چیمہ نے مزید کہا کہ قانون کے مطابق یکم نومبر کو کرشنگ سیزن کا آغاز ہوناچاہیے تھالیکن ایسا نہیں کیا گیا جو عوام اور حکومت کے ساتھ زیادتی ہے،اگر حکومت شوگرملز والوں کو پکڑے گی تو کہا جائے گا کہ شوگرملزمالکان سے زیادتی ہو رہی ہے۔ حکومت نے گنے کی قیمت 225روپے فی من مقرر کی ہے، شوگر ملز،ڈیلرز کا پرافٹ ڈال کر جو قیمت بنتی ہے چینی اسی پر فروخت ہونی چاہیے، حکومت کو مناپلی کو ختم کرنے کیلئے اوپن لائسنسنگ کرنا پڑے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں