61

حکومت نے فرانسیسی سفیر کی ملک بدری کے لئے بڑا قدم اٹھانے کا اعلان کردیا

کومت اور کالعدم تحریک لبیک کے درمیان ہونے والے طویل مذاکرات کامیاب ، حکومت نے فرانسیسی سفیر کو ملک سے نکالنے کے لئے آج منگل کے روز قومی اسمبلی میں قرارداد پیش کرنے اور ٹی ایل پی کے رہنماوں اور کارکنوں کے خلاف درج مقدمات ختم کرنے جبکہ تحریک لبیک نے لاہور سمیت ملک بھر میں سے احتجاجی دھرنے ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے اپنے مختصر ویڈیو پیغام میں کہا ہے ہے کہ حکومت پاکستان اور تحریک لبیک کے درمیان طویل مذاکرات کے بعد یہ بات طے پا گئی ہے کہ ہم آج قومی اسمبلی میں فرانسیسی سفیر کی ملک بدری کی قرارداد پیش کریں گے اور تحریک لبیک لاہور میں مسجد رحمۃ العالمین ﷺ سمیت ملک بھر سے دھرنے کو ختم کرے گی اور بات چیت اور مذاکرات  کا سلسلہ آگے بڑھایا جائےگا اور جن لوگوں کے خلاف فورتھ شیڈول سمیت مقدمات درج ہیں ان کا بھی اخراج کیا جائے گا ۔شیخ رشید کا کہنا تھا کہ  میں اس سلسلہ میں تفصیلی بیان آج شام یا کل پریس کانفرنس میں دوں گا۔

واضح رہے کہ کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) اور حکومتی کمیٹی کے مذاکرات کے دو دور ہوئے تھے جس میں فرانسیسی سفیر کو ملک بدر کرنے اور شیخ رشید کے استعفے کے حوالے سے ڈیڈ لاک برقرار تھا، کالعدم ٹی ایل پی سے ہونے والےمذاکرات کے پہلے دو ادوار میں حکومت کی جانب سے گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور ،صوبائی وزیرقانون محمد بشارت راجا،وزیراعظم کےمعاون خصوصی برائے مذہبی امور علامہ حافظ طاہر محمود اشرفی شریک ہوئےجبکہ مذاکرات کے تیسرے طویل  دور میں وزیر داخلہ شیخ رشید اور وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری  شریک ہوئے۔ اس سے قبل صاحبزادہ حامد رضا، ثروت اعجازقادری، میاں جلیل شرقپوری، صاحبزادہ ابوالخیرزبیر اوردیگرعلماء و مشائخ نے کوٹ لکھپت جیل میں کالعدم ٹی ایل پی کے سربراہ حافظ سعد حسین رضوی سے سات گھنٹے طویل مذاکرات کئے،علمائے کرام نے کہا کہ انتشار اور  گھیراؤ  جلاوسے اپنے ہی ملک کا نقصان ہوا ہے، ملک میں امن و امان کی فضا کو قائم رکھا جائے۔

واضح رہے کہ کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) اور حکومتی کمیٹی کے مذاکرات کے دو دور ہوئے تھے جس میں فرانسیسی سفیر کو ملک بدر کرنے اور شیخ رشید کے استعفے کے حوالے سے ڈیڈ لاک برقرار تھا، کالعدم ٹی ایل پی سے ہونے والےمذاکرات کے پہلے دو ادوار میں حکومت کی جانب سے گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور ،صوبائی وزیرقانون محمد بشارت راجا،وزیراعظم کےمعاون خصوصی برائے مذہبی امور علامہ حافظ طاہر محمود اشرفی شریک ہوئےجبکہ مذاکرات کے تیسرے طویل  دور میں وزیر داخلہ شیخ رشید اور وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری  شریک ہوئے۔ اس سے قبل صاحبزادہ حامد رضا، ثروت اعجازقادری، میاں جلیل شرقپوری، صاحبزادہ ابوالخیرزبیر اوردیگرعلماء و مشائخ نے کوٹ لکھپت جیل میں کالعدم ٹی ایل پی کے سربراہ حافظ سعد حسین رضوی سے سات گھنٹے طویل مذاکرات کئے،علمائے کرام نے کہا کہ انتشار اور  گھیراؤ  جلاوسے اپنے ہی ملک کا نقصان ہوا ہے، ملک میں امن و امان کی فضا کو قائم رکھا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں