68

دوست ممالک سے بات ہو رہی ہے، بیرون ملک پاکستانیوں کو تنہا نہیں چھوڑیں گے

اکستان کے وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ’بیرون ملک مقیم پاکستانی یقین رکھیں کہ ہم ان کو تنہا نہیں چھوڑیں گے، ویزوں کے دوبارہ کھولنے کے حوالے سے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اور متحدہ عرب امارات کے ولی عہد شیخ محمد بن زید سے بات کر چکا ہوں اور دوبارہ بھی کروں گا۔‘ 
اتوار کو براہ راست ٹیلی فون کالز کے دوران ایبٹ آباد سے ایک شہری کے سوال کے جواب میں وزیراعظم نے کہا کہ ’کورونا سے پوری دنیا میں مشکلات آئی ہیں۔ کورونا کی وجہ سے سفری پابندیاں لگیں اور سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی حکومتوں نے پابندیاں لگائیں کیونکہ وہاں بھی صورت حال خراب ہوئی۔‘ 
عمران خان نے کہا کہ ان کی حکومت مہنگائی پر قابو پا کر رہے گی اور شہریوں کو گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔
وزیراعظم نے کہا کہ کسان کا مارکیٹ کے ساتھ رابطہ براہ راست کر رہے ہیں تاکہ قیمت میں اضافہ نہ ہو۔ ’اس کے لیے مڈل مین کو ختم کرنا ضروری ہے جو قیمتوں میں اضافے سے پیسے کما رہے ہیں۔‘
’جہاں دکاندار زیادہ قیمت وصول کر رہے ہیں وہاں مہنگائی کو انتظامیہ کے ذریعے ٹھیک کر سکتے ہیں۔‘
عمران خان نے کہا کہ مارکیٹ میں مافیاز بیٹھے ہوئے ہیں جو ذخیرہ اندوزی کے ذمہ دار ہیں۔ ’مافیاز نے چینی اور آٹے کی ذخیرہ اندوزی کر کے مصنوعی طریقے سے قیمتوں میں اضافہ کیا۔‘ 
’آپ کا وزیراعظم آپ کے ساتھ‘ میں فون کرنے والی اسلام آباد کی رہائشی خاتون عنبرین قیوم نے عمران خان سے کہا کہ مہنگائی بڑھتی جا رہی ہے اور بچوں کی تعلیم مشکل ہوتی جا رہی ہے۔ اس صورتحال میں خدارا یا تو مہنگائی کو کنٹرول کریں یا پھر ہمیں گھبرانے کی اجازت دے دیں۔
وزیراعظم نے اس کے جواب میں کہا کہ ان کی حکومت کی اس وقت ساری توجہ مہنگائی پر قابو پانے پر ہے۔ ’گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے، سارا وقت اس پر کام کر رہے ہیں، مہنگائی پر قابو پا کر دکھائیں گے۔‘
عمران خان نے مزید کہا کہ ہیلتھ کارڈ کی وجہ سے پاکستان میں صحت کے شعبے میں انقلاب آنے والا ہے، پنجاب اور گلگت بلتستان میں سال کے آخر تک ہر خاندان کے پاس صحت کارڈ ہوگا، دس لاکھ کے اندر کسی ہسپتال سے علاج کروا سکیں گے۔ 

انہوں نے کہا کہ ہیلتھ سیکٹر کو نیشنلائز کرنا غلطی تھی، اوقاف، متروکہ وقف املاک اور دیگر سرکاری زمینوں پر نجی ہسپتال بنائے جائیں گے اور ڈیوٹی فری طبی سامان میسر ہوگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں