61

مریم نواز کو جاتی امراءاراضی کیس کی تحقیقات کے لیے 26 مارچ کو طلب کرلیا

2013ءمیں شریف فیملی نے ساڑھے 3 ہزار کنال اراضی مبینہ ملی بھگت سے حاصل کی، 2015ءمیں سابق ڈی سی نور الامین مینگل، ڈی جی ایل ڈی اے احد خان چیمہ اور دیگر کی مبینہ ملی بھگت سے لاہور کا ماسٹر پلان ہی تبدیل کرا دیا گیا.نیب کا نوٹس

قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور نے مسلم لیگ نون کی نائب صدر مریم نواز کو جاتی امراءمیں 1500 کنال اراضی کی مبینہ غیر قانونی منتقلی کی تحقیقات میں بھی 26 مارچ کو طلب کرلیا، گزشتہ روز مریم نواز کو چوہدری شوگر ملز کیس میں بھی 26 مارچ کی طلبی کا پروانہ جاری کیا گیا تھا. مریم نواز کے خلاف کرپشن کیسز کی تحقیقات میں نیا موڑ آگیا ہے، نیب لاہور نے مریم نواز کو 26 مارچ کو ایک اور کیس میں طلبی کا نوٹس بھجوا دیا ہے جس میں انہیں جاتی امراءمیں 1500 کنال اراضی کی مبینہ غیر قانونی منتقلی کی تحقیقات میں طلب کیا گیا ہے.نیب نوٹس کے مطابق 2013ءمیں شریف فیملی نے ساڑھے 3 ہزار کنال اراضی مبینہ ملی بھگت سے حاصل کی، 2015ءمیں سابق ڈی سی نور الامین مینگل، ڈی جی ایل ڈی اے احد خان چیمہ اور دیگر کی مبینہ ملی بھگت سے لاہور کا ماسٹر پلان ہی تبدیل کرا دیا گیا. شریف فیملی کی انتظامیہ سے ملی بھگت سے جاتی امراءمیں ہزاروں کنال اراضی کو گرین لینڈ ایریا ڈکلیئر کرایا گیا، نوٹس میں مریم نواز کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ پیشی کیلئے تمام مطلوبہ ریکارڈ ہمراہ لائیں.واضح رہے کہ گزشتہ روز ترجمان نیب کا کہنا تھا کہ چوہدری شوگر ملز کیس میں مریم نواز کو دوبارہ کال اپ نوٹس جاری کیا، مریم سے متعلق نیب لاہور کو نئے شواہد موصول ہوئے جن کی روشنی میں مریم نواز سے تحقیقات کرنی ہیں مریم نواز اس سے قبل 11 اگست 2020ءکو نیب لاہور میں پیش ہوئی تھیں یاد رہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نے مریم نوازکے نیب کے خلاف بیانات پر ردعمل میں کہا تھا کہ نیب کی کسی سیاسی پارٹی سے کسی قسم کی کوئی وابستگی نہیں نون لیگی راہنماءکی بیان بازی کا مقصد شریف خاندان کی کرپشن اور منی لانڈرنگ کے مقدمات کی تحقیقات میں رکاوٹ ڈالنا ہے.مسلم لیگ نون کی نائب صدر مریم نواز کے بیانات پر نیب لاہور کی جانب سے وضاحت جاری کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ مریم نواز کیخلاف چوہدری شوگرملز اور منی لانڈرنگ میں مبینہ طور پر ملوث ہونے کے مقدمات زیرِ تحقیقات ہیں نیب، عدلیہ اور لاءاینڈ آرڈر سے متعلقہ اداروں کیخلاف بغاوت سے لبریز بیان بازی کی جاتی رہی، بیان بازی کا مقصد شریف خاندان کی کرپشن اور منی لانڈرنگ کے مقدمات کی تحقیقات میں رخنہ ڈالنا تھا نیب لاہور کا کہنا ہے کہ بیان بازی کا مقصد نقصِ امن کی صورتحال کو تقویت دینا بھی رہا ،مریم نواز مبینہ طور پر اپنے خلاف جاری تحقیقات سے باقاعدہ روگردانی کرنے کی کوشش کرتی رہیں.قومی اداروں کو ایک دوسرے کے مدِ مقابل لا کھڑا کرنے کی فضا قائم کرنے کی سعی کی جاتی رہی،مریم نواز نے مبینہ طور پر عوام میں اشتعال انگیز بیانات دیتے ہوئے لاءاینڈ آرڈر کو چیلنج کیا نیب لاہور نے کہا ہے کہ گزشتہ سال اگست میں نیب لاہور میں پیشی کے وقت قومی ادارے کا تقدس پامال کیا گیا، منصوبہ بندی کے تحت پتھراﺅ کروایا گیا، سیکیورٹی اداروں کو بھی چیلنج کیا گیا،واقعے کی ایف آئی آر متعلقہ تھانہ چوہنگ میں درج ہے.مریم نواز کی سیاسی مصروفیات کے باعث انہیں کچھ وقت کیلئے طلب نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا تاہم اس کا ناجائز فائدہ اٹھایا گیا اور مستقل طور پر احتساب کے عمل کو چیلنج کیا جاتا رہا نیب لاہور نے کہا کہ اس دوران معزز عدالتوں اور ان کے صادر فیصلوں کا مذاق اڑانے کی کوشش بھی کی گئی ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں