100

وزیراعظم کا ریلیف پیکیج ایک مذاق ہے اپوزیشن و دیگر کا ردعمل

وزیراعظم عمران خان کی جانب سے بڑے ریلیف کے اعلان پر اپوزیشن اور دیگر شخصیات نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے، اس سے ایک مذاق قرار دے دیا۔

سیاست دانوں اور صحافیوں نے وزیر اعظم کی تقریر اور حکومت کے بہت بڑے ریلیف پیکیج پر سوال اٹھائے۔

مزید پڑھیں: وزیر اعظم کا 2 کروڑ خاندانوں کیلئے 120 ارب روپے کے ریلیف پیکج کا اعلان

پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ وزیراعطم کا ریلیف پیکج ‘ایک مذاق کے سوا کچھ نہیں ہے’۔

انہوں نے کہا کہ ‘وزیراعظم نے دعویٰ کیا کہ صرف چند خاندان 6 ماہ کے لیے گھی، آٹا اور دالوں میں پیکیج سےمستفید ہوں گے، تین برسوں میں گھی 108 فیصد، آٹا 50 فیصد اور گیس 300 فیصد اضافہ ہوچکا ہے’۔

ان کا کہنا تھا کہ ’30 فیصد بہت کم ہے، 20 کروڑ لوگوں کے لیے بہت تاخیر ہوئی ہے جو تاریخی مہنگائی، غربت اور بےروزگاری کا سامنا کر رہے ہیں’۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کے خطاب سے عوام کا کرب مزید بڑھ گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ خطاب اپنی نااہلی، بے بسی اور انتظامی جمود کو واضح اعتراف تھا، وزیراعظم عمران خان ایسے آئے جیسے سب کچھ ان کے کنڑول سے چلا گیا ہو۔

شہباز شریف نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت عذاب بن گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں