76

کے ٹو مہم میں تین کوہ پیما لاپتہ ہوگئے

دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو کو سر کرنے کے لیے جانے والی ٹیم میں شامل تین افراد لاپتہ ہو گئے ہیں جن میں پاکستان کے کوہ پیما محمد علی سدپارہ بھی شامل ہیں۔
سنیچر کو الپائن کلب کی جانب سے کی جانے ٹویٹس میں بتایا گیا ہے کہ تینوں کوہ پیماؤں کا رابطہ جمعے سے منقطع ہوا ہے۔
ریسکیو آپریشن شروع کر دیا گیا ہے جس کے لیے ہیلی کاپٹر بھی استعمال کیے جا رہے ہیں۔‘
الپائن کی جانب سے عوام سے دعا کی اپیل بھی کی گئی ہے۔ساجد علی سدپارہ جمعے کی شام کو واپس سی تھری آ گئے تھے کیونکہ ان کا آکسیجن ریگولیٹر کام نہیں کر رہا تھا تاہم دیگر کوہ پیماؤں نے بلندی کی طرف سفر جاری رکھا تھا۔
ایک اور ٹویٹ میں الپائن کلب کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ ریسکیو آپریشن کے لیے پائلٹ کو ہدایت کی گئی ہے کہ جس حد تک ممکن ہو اونچائی پر پرواز کرے۔ پہاڑ پر درجہ حرارت بہت کم ہے جبکہ 6500 میٹر کے اوپر کے علاقے میں ہوا کی رفتار 35 کلومیٹر فی گھنٹہ سے زیادہ ہے۔
کلب کے مطابق بیس کیمپ میں آکسیجن بوتلیں، ماسک، ریگولیٹرز اور دوسرا سامان تیار کر کے رکھا گیا ہے۔
اسی طرح محمد علی سدپارہ کے اکاؤنٹ سے ان کے نمائندے راؤ احمد نے ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ’ہم ابھی تک علی، جان سنوری اور جے پی موہر سے رابطے کی کوشش کر رہے ہیں، تاہم تمام حفاظتی انتظامات کر لیے گئے ہیں۔ ان کے ساتھ آخری رابطہ رات ایک بجے اور اس کے بعد صبح چار بجے ہوا تھا۔‘

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں